تحریر:سید ابو الاعلی مودودی 

مسجدِ اقصیٰ میں آتشزنی کی دلخراش خبر ہر مسلمان کے قلب و روح پر بجلی بن کر گری ہے اور صرف پاکستان ہی کے مسلمان نہیں بلکہ ساری دنیا کے مسلمان اس پر تڑپ اٹھے ہیں۔ اس وقت بار بار لوگوں کے ذہن میں یہ سوال ایک طوفان کی طرح اٹھ رہا ہے کہ آخر اس مصیبت کاعلاج کیا ہے؟ یہ ہماری تاریخ کے نازک ترین لمحات میں سے ایک لمحہ ہے۔ 



تحریر: سید حیدر نقوی
مقدمہ:
امن کے لفظی معنی چین، اطمینان، سکون و آرام نیز صلح، آشتی و فلاح کے ہیں۔ اسی طرح امن بجائے خود لفظ اسلام میں داخل ہے، جس کے معنی ہیں دائمی امن و سکون اور لازوال سلامتی کا مذہب۔( ابن منظور، لسان العرب، 13: 23) ایمان عربی زبان کا لفظ ہے، اس کا مادہ ’’ا۔ م۔ ن‘‘ (امن) سے لیا گیا ہے۔ لغت کی رو سے کسی خوف سے محفوظ ہو جانے، دل کے مطمئن ہو جانے اور انسان کے خیر و عافیت سے ہمکنار ہونے کو اَمن کہتے ہیں۔



تحریر: سیدہ زینب بنت الھدی
خدائے بزرگ و برتر نے یہ کائنات خلق کی تو وجہ تخلیق کائنات بھی خلق کیے اور وہ ہستیاں ایسی ہیں، جن کے بغیر دنیا کا نظام نہیں چل سکتا۔ خدا کی محبت کے بغیر کبھی بھی کائنات خالی نہیں رہی، ہر دور میں خدا کی حجت دنیا میں موجود رہی اور ابھی بھی خدا کی آخری حجت باقی ہے۔ جس کے انتظار میں قیامت رُکی ہوئی ہے۔



تحریر: سیدہ ندا حیدر
نظریہ مہدویت ایسا موضوع ہے، جو صدیوں سے انسانوں کے درمیان زیر بحث رہا ہے۔ اس اعتقاد کے ساتھ انسان کا مستقبل روشن ہے، یہ عقیدہ کسی ایک قوم، کسی فرقے یا کسی مذہب کے ساتھ مخصوص نہیں ہے بلکہ مہدویت ایک ایسی عالمگیر حکومت کا نام ہے کہ جس کی بنیاد تمام انسانوں کے مابین عدل و انصاف اور اخلاق و محبت پر ہوگی۔ مہدویت ایسی آواز ہے، جو کہ ہر روشن خیال انسان کے اندر فطری طور پر موجود ہے۔ ایسی امید ہے، جو زندگی کو تروتازہ اور غم و اندیشہ سے دور کرکے نور الٰہی کی طرف لے جاتی ہے۔



 
سید اسد عباس

مکتب اہل بیت کی روایات کے مطابق ماہ شعبان امام حسین علیہ السلام، حضرت ابو الفضل العباس، امام زین العابدین اور مہدی موعود کی ولادت کا مہینہ ہے۔ ظہور مہدی کے حوالے امت میں اجماع ہے اور تمام مسالک اور مکاتب فکر احادیث پیغمبر کے تناظر میں اس امر کو جانتے ہیں



تحریر: سیدہ ندا حیدر
اخلاق، قرآن و حدیث کی روشنی میں:
"وَ اِنَّکَ لَعَلٰی خُلُقٍ عَظِیمٍ" (سورۂ قلم/٤) رسول اسلام ۖ سے خطاب کیا جا رہا ہے کہ اے میرے حبیب! آپ خُلق عظیم پر فائز ہیں، اس آیت میں خلق سے مراد "اخلاق اور حسن سیرت" کو لیا گیا ہے۔ اچھا اخلاق، اعلٰی نفسیات کا مالک ہونے کی علامت ہے اور فکر و عقل میں اعلیٰ توازن رکھنے والا ہی اعلیٰ نفسیات کا مالک ہوتا ہے۔ ُخلق عظیم کا مالک ہونے کا مطلب یہ ہے کہ وہ عقل عظیم کا مالک ہے۔ اس طرح مخلوق اول، عقل ہو یا نور محمد صلی اللہ علیہ و آلہ وسلم، بات ایک ہی ہے۔



تحریر: سید حیدر نقوی
اس تحقیقی مقالے میں غیبت کبری کے زمانے کے محدثین ، متکلمین اور علماء سے لے کر موجودہ صدی تک کے اہل سنت اکابرین کے امام مہدی ؑ ، ان کے ظہور نیز ولادت سے متعلق  اقوال، آراء اور تجزیہ کو حوالوں کے ساتھ نقل کیا گیا ہے۔یہ اقوال صدی ہجری کی ترتیب سے مرتب کیے گئے ہیں۔ یہ تحقیقی مقالہ البصیرہ کے شعبہ مہدویت کے رکن سید حیدر نقوی کی کاوش ہے۔ امید ہے مقالہ قارئین کے لیے لائق استفادہ ہوگا۔  (ادارہ)

 



مرتب: فؤاد حیدر جعفری

جہاں مہدی موعود پر سینکڑوں علمی مقالات ، کتب ، تحریریں اور تقاریر موجود ہیں وہیں سوشل میڈیا پر بھی امام زمان علیہ السلام کے عنوان سے سائٹس بھی موجود ہیں ۔ یہ ویب سائٹس متعدد زبانوں میں ہیں جن میں انگریزی، فارسی ، اردو ، عربی زبانیں قابل ذکر ہیں ۔ ان سائٹس پر امام زمانہ کے حوالے سے مواد کو جمع کیا گیا ہے جن میں کتب، مقالات، آڈیوز ، ویڈیوز قابل ذکر ہیں۔ ذیل میں ایسی ہی چند سائٹس کے لنکس درج ہیں ۔

 



تحریر: سیدہ ندا حیدر
احادیث و روایات کا جائزہ لینے سے معلوم ہوتا ہے کہ رسول اکرمﷺ اور آئمہ معصومین علیہم السلام نے جہاں امام مہدیعلیہ السلام کی آخری زمانے میں ظہور کے بارے میں خبر دی ہے وہیں امام مہدی علیہ السلام کی ایسی صفات کی طرف بھی اشارہ کیا گیا ہے جو انبیاء علیہم السلام میں بھی موجود ہیں۔ امام مہدی علیہ السلام کی انہیں صفات میں سے چند ایک کا ہم یہاں ذکر کررہے ہیں:



تحریر: سید حیدر نقوی

إِنَّ رَحْمَتَ اللَّهِ قَرِيبٌ مِنَ الْمُحْسِنِينَ

 اللہ کی رحمت یقیناً نیکی کرنے والوں کے قریب ہے۔(سورہ اعراف ،۵۶)

تازہ مقالے