مرکزی مشاورتی اجلاس  ہدیۃ الہادی پاکستان 28مئی 2020

ایجنڈا
٭ مشرق وسطی کی بگڑتی صورتحال 
٭ صہیونی منصوبہ سپر گورنمنٹ
٭ تیل کی گرتی ہوئی قیمتیں نیز کرونا کی وجہ سے معیشت کی تباہی 
٭ افغانستان سے امریکا کے انخلاء کے بعد بھارت کا اثرو رسوخ
٭ ہدیۃ الہادی کے پیغام کو عالمی سطح پر لے کر جانا
٭ ہدیۃ الہادی کی ضلع اور تحصیل کی سطح پر تنظیم سازی 
٭ دستور العمل 
٭ ہدیہ الہادی یوتھ ونگ
٭ شعبہ بین الاقوامی روابط کا قیام 
٭ فکری نشستیں و اجتماعات
تلاوت کلام پاک: مولانا عرفان عباس 
نعت رسول مقبول :
نظامت : سیداویس شاہ صاحب، سید حسن باری صاحب
زیر صدارت : پیر سید ہارون علی گیلانی 
مہمان خصوصی :پیر ڈاکٹر سید مہدی سبزواری ، پیر غلام رسول اویسی ،
شرکاء :جام محمود واسا، ملک لیاقت ، بیریسٹر خالد خورشید، علامہ سبطین شیرازی ، مفتی امجد عباس، سید حسن باری ، گل بادشاہ، مولانا چراغ الدین شاہ ، پروفیسر سیف اللہ خالد، پیر معرفت شاہ کاظمی 
اجلاس میں شریک اراکین درج ذیل شہروں کے ذمہ داران تھے۔
اسلام آباد، لاہور، سندھ ، جنوبی پنجاب ،ساہیوال ، صوابی ، بھمبر، آزاد کشمیر، گلگت، 
سید ثاقب اکبر
تقریب کے میزبان اور شعبہ تحقیق و تربیت کے سربراہ نے تقریب میں افتتاحی خطاب کرتے ہوئے کہا کہ کرونا کی صورتحال میں آپ کا یہاں جمع ہونا نہایت خوش آئند ہے۔ وہی لوگ دنیا میں کامیاب ہیں جو بہائو کے الٹ تیرنا جانتے ہیں۔ ہمیں دنیا کے بہاو کے الٹ جانا ہے ، علامہ اقبال کا بھی کہنا ہے کہ ہے تیرے دور کا وہی امام برحق جو تجھے حاضر و موجود سے بیزار کرے ۔ سنا تھا کہ آستانوں والے اپنی دنیا میں مست ہو چکے ہیں لیکن آج آستانے والوں نے ان تمام باتوں کو الٹ کر رکھ دیا ہے ۔ ہمارا اتحادپاکستان کی ترقی ، فلاح ، استحکام اور خوشحالی کے لیے ہے۔ اللہ تعالی اس مقصد میں ہماری ہدایت و راہنمائی فرمائے۔
مرکزی مشاورتی اجلاس  ہدیۃ الہادی پاکستان
پیر سید ہارون علی گیلانی 
پیر ہارون گیلانی نے اجلاس میں تنظیم کی اب تک کی پیشرفت کے حوالے سے ایک خلاصہ پیش کیا انہوں نے آنے والے شرکاء کا دیگر سے تعارف کروایا اور جو احباب شریک نہیں ہو سکے ان کے نہ آنے کی وجوہات بیان کیں ۔ انھوں نے کہا کہ اس اجلاس کا مقصد پیش کردہ ایجنڈہ کے مطابق فیصلہ جات کرنا ہے۔ پیر سید ہارون علی گیلانی نے ایجنڈے کے نکات اور ان کی تفاصیل پر روشنی ڈالی ۔ انھوں نے کہا کہ یہ کانفرنس نہیں بلکہ تنظیم کا اہم اجلاس ہے ہمیں اس کو اجلاس کی صورت میں ہی لے کر چلنا ہے۔ پیر ہارون گیلانی نے اجلاس کی پیشرفت کے حوالے سے راہنما اصول بھی پیش کیے ۔
پیر سید ہارون علی گیلانی
ڈاکٹر سید مہدی رضا (سہون شریف)
ہدیۃ الہادی کے مرکزی راہنما اور درگاہ لعل شہباز کے سجادہ نشین ڈاکٹر سید مہدی رضا نے کہا کہ آج کے اجلاس کا ایجنڈا اور دستور نہایت احسن اقدام ہے جس کے ملک میں بہت اچھے اثرات مرتب ہوں گے ۔ میں امید کرتا ہوں کہ ہم سب مل کر اس ایجنڈے کو آگے بڑھائیں گے تاکہ اس کا فائدہ مملکت عزیز پاکستان اور انسانیت تک پہنچے۔
ڈاکٹر پیر سید مہدی رضا (سہون شریف)
پیر غلام رسول اویسی
تحریک اویسیہ کے چیئرمین اور ہدیۃ الہادی کے مرکزی راہنما پیر غلام رسول اویسی نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ جس نیک مقصد کے لیے ہم یہاں جمع ہوئے ہیں اس میں بنیادی ترین چیز امت کا اتحاد ہے، پیر ہارون گیلانی صاحب نے اتحاد امت کے لیے بھی نہایت اہم کاوشیں سرانجام دی ہیں ۔ سید ثاقب اکبر صاحب کا بھی اس جماعت میں آنا جماعت کی فعالیت کو بڑھائے گا، یہ بادشاہ گر ہیں۔بنیادی چیز ہم سب کا اخلاص ہے۔ اس وقت ہمارے پاس جو قیادت ہے شاید ہی دیگر جماعتوں کے پاس اس سطح کی قیادت ہو۔ دستور میں جو ترامیم کی گئی ہیں اس میں اجتماعیت ہے ، کسی کے ذاتی کردار کو ہائی لائٹ نہیں کیا گیا یہ ہمارے استحکام پاکستان ، استعماری قوتوں کے مقابل کھڑے ہونے کے وژن کا آئینہ دار ہے۔ آج وقت کا تقاضا ہے کہ ہم اپنی ڈیڑھ اینٹ کی مساجد سے نکل کر ایک پلیٹ فارم پر کام کریں جو کہ ہدیۃ الہادی کی صورت میں ہمارے پاس موجود ہے۔ اگر ہم نے اخلاص اور استقامت کو اپنا لیا تو کوئی چیز ہماری راہ کی رکاوٹ نہیں بن سکتی 
بیریسٹر خالد خورشید:(گلگت)
ہدیۃ الہادی پاکستان کے گلگت کے راہنما بیریسٹر خالد خورشید نے اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ پاکستان ایک نظریہ پر قائم ہوا ہے ، اگر یہ نظریہ نہیں ہے تو پاکستان کا کوئی وجود نہیں ہے ۔ ہم سب پاکستان اور اتحاد امت وہ دو چیزیں ہیں جس کی وجہ سے ہم نے ہدیۃ الہادی میں شرکت کی۔ سب سے پہلے ہم نے نظریاتی طور پر اپنی جہت کا تعین کرنا ہے۔ لیلۃ القدر گزری ہے جس رات اللہ نے قرآن بھی عطا کیا اور پاکستان بھی عطا کیا ۔ ہم ہمیشہ اپنی ناقدری کے سبب مار کھا گئے۔ میرے خیال میں نوجوانوں کو اس لشکر کا حصہ بنانا چاہیے ۔ اس وقت سرحدوں سے بڑا حملہ اندرونی طور پر ہو رہا ہے۔ جتنی کانفرنسیں ممکن ہیں کی جائیں۔
سید گل بادشاہ:(کوہستان)
کوہستان سے ہدیۃ الہادی کے مرکزی راہنما سید گل بادشاہ نے کہا کہ پاکستان کا یہ المیہ ہے کہ کھاتے بھی اسی ملک کا ہیں اور گالیاں بھی اس ملک کو نکالتے ہیں ۔ یہ سیاستدانوں کا پیشہ ہے۔ اس تنظیم کی بنیاد سادات نے رکھی ہے ۔ یوتھ کو فی الفور تشکیل دینے کی ضرورت ہے۔ بعض لوگ پاکستان کو فلسطین ، افغانستان اور کشمیر بنانا چاہتے ہیں۔ امت کا متحد ہونا کرونا سے بھی اہم ہیں۔ 
ملک لیاقت تبسم:(پشاور)
ہدیۃ الہادی پیشاور کے راہنما ملک لیاقت تبسم نے تقریب میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ اللہ ہمیشہ ان کی مدد کرتا ہے جو مصیبت میں صبر اختیار کرتے ہیں، آج یہودیت اور صہیونیت ہم پر مسلط ہیں اور ہمیں تابع کرنے کی کوشش کر رہے ہیں ہم کبھی بھی یہود و نصاری کی اتباع نہیں کریں گے۔

عابد حسین :(ساہیوال)
ہدیۃ الہادی ساہیوال کے مسئول عابد حسین نے کہا کہ اس وقت جو سامراج ہمارے اوپر بٹھایا گیا ہے وہ ہمیں ہر جانب سے جکڑنا چاہتا ہے۔ کرونا ایک چھوٹا تجربہ ہے استعماری طاقتوں نے جاننا چاہا تھا کہ اگر ہم دنیا پر یلغار کریں تو ہمیں کس قدر کامیابی مل سکتی ہے اور افسوس سے کہنا پڑتا ہے کہ سامراجی قوتیں مکمل طور پر کامیاب ہو چکی ہے۔ آج ہمارے گھروں میں پلنے والے بچے میڈیا کے غلام ہیں۔ ہمیں فیصلہ کرنا ہے کہ کیا ہمیں امریکہ کے بعد چین اور ترکی کی غلامی کرنی ہے۔ کرونا کے بعد آنے والی وبا ٹڈی دل ہے جس کا آغاز ہو چکا ہے۔ ٹڈی دل بھی ایک تیار شدہ قسم ہے اس کا مقصد خوراک کو کنٹرول کرنا ہے۔ جس کا مقصد جینیاتی طور پر بیج مہیا کرناہے۔ ہمیںہدیۃ الہادی میں ایک سائنسی اور تحقیقی ونگ بھی بنانے کی ضرورت ہے تاکہ ہم سائنسی مسائل کا مقابلہ کر سکیں۔
شہباز:(لاہور)
ہدیۃ الہادی لاہور کے مسئول شہباز نے اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ آج سب کی حاضری سے اس بات کا ثبوت ملا ہے کہ تمام احباب تنظیم کے اہداف و مقاصد سے ہم آہنگ ہیں، چھوٹی میٹنگ کے ذریعے ممبر سازی کی جاسکتی ہے، اسی طرح ممبر سازی کے لیے ٹارگٹ بھی ہونا چاہیے ۔ ڈاکٹرز اور ٹیکنوکریٹس کو بھی ساتھ ملانے کی ضرورت ہے۔ پاکستان کو اسلامک ورلڈ آرڈر کا اعلان کرنے کی ضرورت ہے۔ تاکہ ہم اس کی ترویج کر سکیں۔ 
جام محمود واسا:(صادق آباد)
صادق آباد سے آئے ہوئے ہدیۃ الہادی کے مسئول جام محمود واسا نے تقریب میں سرائیکی زبان میں خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں چھوٹی میٹنگزکے ذریعے یونٹ سازی کرنے کی ضرورت ہے۔ نوجوان تنظیم کی ریڑھ کی ہڈی ہوتے ہیں ، ان کو منظم کرنے کی ضرورت ہوتی ہے۔
علامہ سید سبطین شیرازی:( اسلام آباد)
ہدیہ الہادی کا اقدام بروقت اور اہم ہے، ہمیں ملک بھر کے آستانوں سے رابطہ کرنا چاہیے ، سائنسی ونگ اور یوتھ ونگ بھی وقت کی اہم ضرورت ہیں۔
قاضی شفیق الرحمن: (مانسہرہ)
ہدیہ الہادی کے مرکزی راہنما قاضی شفیق الرحمن نے کہا کہ نوجوانوں کے ونگ سے اتفاق کرتا ہوں۔سائنسی ونگ کی بھی میں توثیق کرتا ہوں کرونا ایک عالمی سازش ہے جس پر تحقیق کی ضرورت ہے۔
پروفیسر سیف اللہ خالد(نمائندہ حافظ عبد الغفار روپڑی )
اللہ کا حکم ہے اگر تم مومن ہو تو تم ہی سربلند ہوگے ۔ مومن کا دل اللہ کا ذکر سن کر ڈر جاتا ہے۔ ہدیۃ الہادی کا دستور ، حلف الفضول کا دستور ہے۔ رسالت ماب اسی دستور پر نکلنے کے لیے کہتے تھے ۔ 
مفتی سید معرفت شاہ : نائب رہبر 
ہدیۃ الہادی کے نائب رہبر مفتی سید معرفت شاہ نے تقریب میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ اسلام غلبے کے لیے ہے ، اس وائرس نے دنیا سے ختم ہونا ہے۔ امام مہدی کا ظہور ہونا ہے اور ہدیۃ الہادی اس لشکر کا حصہ بنے گا ۔ہمیں سب سے زیادہ مشکل کے پی کے میں تھی اور اللہ کے فضل سے ہمارا یہ قافلہ آگے بڑھ رہا ہے۔ 
مرکزی مشاورتی اجلاس  ہدیۃ الہادی پاکستان
فیصلہ جات

٭ تنظیم  سازی  کے لیے درج ذیل کمیٹی تشکیل دی گئی جو کہ 45روز کے بعد اپنی رپورٹ پیش کرے گی۔
سید ثاقب اکبر
مفتی معرفت شاہ صاحب
سید حسن باری 
٭ تنظیم سائٹ جلد ہی لانچ کی جائے گی اس سلسلے میں تنظیم کے آئی ٹی کے ماہرین اقدام کریں گے۔
٭ ہدیۃ الہادی کا یوتھ ونگ تنظیم ساز کمیٹی سے مزید مشاورت کے بعد تشکیل دیا جائے گا
٭ سالانہ اجتماع ( گلگت اور بٹگرام کے اجتماعات ملتوی ،چترال اور ساہیول کے اجتماعات فی الحال شیڈول کے مطابق ہوں گے)

تلاش کریں

تقویم

« May 2021 »
Mon Tue Wed Thu Fri Sat Sun
          1 2
3 4 5 6 7 8 9
10 11 12 13 14 15 16
17 18 19 20 21 22 23
24 25 26 27 28 29 30
31