اتحاد و وحدت

سفیر وحدت امت مولانا محمد اسحاق

سید نثار علی ترمذی
جدید وسائل ابلاغ کی دستیابی نے ایک نئے جہان علم و دانش سے بھی آشنائی دی۔ اس کے سبب ہم بہت سے ایسے اہل علم سے بھی روشناس ہوئے جو اتحاد امت کے جذبے سے سرشار ہیں۔ ان میں سے ایک علمی شخصیت جن سے راقم متعارف ہوا وہ تھے مولانا محمد اسحاق آف فیصل آباد۔ آپ کی تقاریر کے ویڈیوز سن کر ان کی شخصیت و افکار کے کئی پہلو آشکار ہوئے۔ انھیں کئی حوالوں سے منفرد پایا۔ ان کا انداز گفتگو انتہائی دلنشین اور درد امت لیے ہوتا تھا۔ وہ امت محمدی کو متحد اور طاقتور دیکھنا چاہتے تھے۔ انھوں نے اختلاف امت کو حل کرنے کے نئے انداز دیے۔ انھو ںنے اختلافات کو برداشت کرتے ہوئے اسے سلسلہ¿ تاریخ کا جبر قرار دیا۔ ان کا کہنا تھا کہ ماضی کی لڑائی میں آج کے دور کا نہ تو کوئی فرد شامل تھا اور نہ کسی پر اس کی ذمہ داری آتی ہے۔ لہٰذا وہ آج کے مسلمانوں کو صلح کا راستہ اختیار کرنے کا مشورہ دیتے رہے۔

  • مشاہدات: 32

علامہ سید ساجد علی نقوی کی وحدت امت کے لیے خدمات

سید نثار علی ترمذی

یہ بھلے دنوں کی بات ہے۔ باغ جناح لاہور کے سبزہ زار میں ایک ظہرانہ منعقد ہوا جس میں مختلف مکاتب فکر کے علماءکرام کو دعوت تھی۔ علامہ ساجد نقوی صاحب بھی مدعو تھے۔ بہت اچھی باتیں ہوئیں۔ علامہ صاحب نے اس ظہرانے میں جو گفتگو کی اس کے دو نکات قابل توجہ ہیں:
۱۔ مسائل کے حل کے لیے اجتہاد کیا جانا چاہیے۔
۲۔ مسالک کے درمیان جو مشترکات ہیں انھیں پبلک لاءکے طور پراور جن مسائل میں اختلاف ہے انھیں پرسنل لاءکے طور پر نافذ کیا جائے۔
جب مولانا مودودیؒ کے بارے میں مطالعہ کررہا تھا تو ان کی ابتدائی تحریروں میں ایسی ہی تجویز سامنے آئی تھی۔ مگر 22نکات کے بعد وہ موقف سامنے آیا جو آج کل زیر بحث ہے کہ اکثریت کا پبلک لاءہو گا اور پرسنل لاءمیں مسالک کو اختیار ہوگا۔

  • مشاہدات: 13

سید ثاقب اکبر، اتحاد امت کے لیے متحرک روح

سید نثار علی ترمذی

یہ ربع صدی سے زیادہ کا قصہ ہے، دو چار برس کی بات نہیں۔ 1986 کے اوائل کی بات ہے جب ثاقب بھائی سے آشنائی ہوئی جو دن بدن ارتقاءپذیر ہے۔ جب بھی انھیں دیکھا ہے عالم نو میں دیکھا ہے ہمیشہ خوب سے خوب تر کی تلاش میں رہنے والے اپنے دوست، بھائی، مفکر، دانشور اور عالم کے بارے میں لکھنا ایک مضمون کا دامن تنگی ¿ داماں شکوہ کرتا نظر آتا ہے۔ ان کی طویل ترین جدوجہد متقاضی ہے کہ ان پر ایک مفصل کتاب لکھی جائے۔ مگر سردست ایک مختصر مضمون میں ان کے وحدت امت کے حوالے سے افکار اور اقدامات کا جائزہ لیا جانا مقصود ہے۔

  • مشاہدات: 26