سید اسد عباس

ایران اور وینزویلا کا ایک درد مشترک امریکی پابندیاں ہیں، نیز ان کی اقدار مشترک امریکی سامراجی عزائم کی مخالفت، آزاد اقتصاد اور حق خود مختاری ہیں۔ وینزویلا جنوبی امریکا کا ایک اہم ملک ہے، جو انیسویں صدی میں فرانس کی کالونی تھا۔ یہ جنوبی امریکہ کے ممالک میں سے پہلا ملک ہے، جس نے فرانس سے آزادی حاصل کی۔



 
سید ثاقب اکبر نقوی

آج (22 مئی 2020ء) کو جب عالمی یوم القدس منایا جا رہا ہے، ہمیں جہاں فلسطینیوں کی کربناک صدائیں سنائی دے رہی ہیں، وہاں کشمیریوں کی فریادیں بھی بلند ہیں اور سینوں کو چھلنی کئے دیتی ہیں۔ شاید ابھی کم لوگ اس مسئلے کی طرف متوجہ ہیں کہ بھارتی برہمن سامراج اور صہیونی درندہ صفت گماشتوں کے باہمی روابط دیرینہ ہیں اور دونوں فلسطینیوں اور کشمیریوں کی نسل کشی اور ان کے حقوق کو غصب کرنے کے لیے ایک جیسی پالیسیوں پر عمل پیرا ہیں۔



 
سید اسد عباس

گذشتہ ستر سے زائد برس سے اسرائیل کو فوجی حمایت مہیا کرنے، سفارتی سطح پر اسرائیل کے وجود کو عالمی برادری سے تسلیم کروانے کی کاوشیں کرنے، اقوام متحدہ میں اسرائیلی ظلم اور بربریت کے خلاف آنے والی ہر قرارداد کو ویٹو کرنے، عملی طور پر اسرائیل کے لیے دنیا بھر میں بالعموم اور اسلامی ممالک میں بالخصوص سفارت کاری کرنے، اسرائیل کے وجود کے مخالفین پر اقتصادی پابندیاں لگوانے، ان کو مختلف سطح پر دہشت گرد قرار دلوانے کے بعد امریکا نے اپنے سب نقاب الٹ دیئے اور واضح طور اس جارح اور ناجائز اکائی کی پشت پر آن کھڑا ہوا ہے۔



 
سید ثاقب اکبر نقوی

عام طور پر یہ سمجھا جاتا ہے کہ اسرائیل ایک بہت طاقتوراورمضبوط ریاست ہے۔ اس لئے بھی کہ اسے دنیا کی بڑی طاقتوں کی حمایت حاصل ہے نیز وہ ایک ایسی متحد قوم ہے جو بے پناہ اقتصادی وسائل رکھتی ہے، جس کا امریکہ جیسی طاقت کے اوپر بہت اثرورسوخ ہے اورجس کے پاس نہایت جدید اورطاقتور ذرائع ابلاغ موجود ہیں۔



 
سید ثاقب اکبر نقوی

کرونا کے دور میں لگتا ہے کہ بہت کچھ بدل گیا ہے اور شاید بہت کچھ بدل جائے، کیونکہ پیش گوئیاں تو یہ ہو رہی ہیں کہ کرونا کے ساتھ جینا سیکھنا پڑے گا۔ حکومتوں کی ترجیحات تبدیل ہوگئیں اور روابط کے انداز بدل گئے۔



 
سید اسد عباس

ایسا محسوس ہوتا ہے جیسے قضیہ فلسطین فیصلہ کن مراحل میں داخل ہوچکا ہے۔ صہیونی اور ان کے سرپرست اسی طرح اس ریاست کو ناجائز اور خطے میں مسائل کا سرچشمہ قرار دینے والے تقریباً حتمی کاوشیں سرانجام دے رہے ہیں۔



 
سید ثاقب اکبر نقوی

سعودی ولی عہد محمد بن سلمان نے 2017ء میں سعودی عرب کی ترقی کے لیے ایک بہت بڑا اور مہنگا منصوبہ پیش کیا، جس کا عنوان وژن 2030ء رکھا گیا۔ انہوں نے اعلان کیا کہ یہ پراجیکٹ جدید معیارات کے مطابق اور ترقی یافتہ ٹیکنالوجی کا شاہکار ہوگا۔



دسمبر کے آخرمیں کرونا نامی وائرس چین کے علاقے ووہان سے اپنی تباہکاریوں کے ساتھ  پھیلنا شروع ہوا دیکھتے ہی دیکھتے اس نے اپنے پنجے پوری دنیا میں گھاڑ لیے طاقتور ترین اور اپنی ایجادات کا لوہا منوانے والے ممالک بھی اس کے وار سے نہ بچ سکےاس وقت پوری دنیا میں تقریباً جزوی لاک ڈون ہے زمینی اور ہوائی راستے بند ہیں۔



 
سید اسد عباس

آج انسانیت ایک دوراہے پر کھڑی ہے، اس کے لیے یہ فیصلہ کرنا مشکل ہوگیا ہے کہ کرونا ان کے لیے زیادہ خطرناک ہے یا بھوک اور معاشی تعطل۔ دنیا کا خیال تھا کہ چند ہفتوں کے لاک ڈاون سے کرونا کی وبا کو کنٹرول کر لیا جائے گا، کئی ممالک کو تو یہ توقع ہی نہیں تھی کہ کرونا ان کے ممالک پر یوں حملہ آور ہوگا۔ 



 
سید ثاقب اکبر نقوی

سیف الدین سیف نے کہا تھا:
خریدتا  تھا  بھلا  کون  ٹھیکرا  دل  کا
وہ لے گئے ہیں کہ پیالہ بہت ہی سستا ہے

لیکن تیل کی صورت حال عالمی سطح پر بالعموم اور امریکہ میں بالخصوص اس سے بھی مختلف ہے۔ اس کے لیے ایک مبصر نے یہ مثال دی ہے:

تازہ مقالے

تلاش کریں

کیلینڈر

« July 2020 »
Mon Tue Wed Thu Fri Sat Sun
    1 2 3 4 5
6 7 8 9 10 11 12
13 14 15 16 17 18 19
20 21 22 23 24 25 26
27 28 29 30 31    

تازہ مقالے

  • شیطان اپنے اولیاء کو وحی کر رہے ہیں
      پاکستان میں جس طرح کے فتنے مذہب کے نام پر رونما ہو رہے ہیں، ان سے ظاہر ہوتا ہے کہ شیطان لگاتار اپنے اولیاء، نمائندگان اور دوستوں کو وحی کر رہے ہیں۔ قرآن حکیم اس بات کی پہلے ہی خبر دے چکا ہے کہ شیطان اپنے اولیاء کو وحی…
    Written on سوموار, 29 جون 2020 16:57 in مذهبی Read more...
  • کشمیر کی حالت زار اور راہ حل
      کشمیری پانچ اگست 2019ء سے اپنے گھروں میں قیدیوں کی زندگی بسر کرنے پر مجبور ہیں۔ بھارتی فوج نے وادی میں، مارکیٹیں، بزنس اور پبلک ٹرانسپورٹ بند کر رکھی ہے، ادویات کی کمی کی وجہ سے مریض جان سے ہاتھ دھونے لگے ہیں۔ اپنے گھروں میں بھی کشمیریوں کو…
    Written on الجمعة, 26 جون 2020 09:53 in سیاسی Read more...