اتوار, 15 نومبر 2020 07:18

مسئلہ کشمیر اور گلگت بلتستان



 
سید اسد عباس

پاکستان کے وزیراعظم عمران خان نے اتوار یکم نومبر کو گلگت بلتستان کی آزادی پریڈ سے خطاب کرتے ہوئے جی بی کو عبوری صوبائی حیثیت اور آئینی حقوق دینے کے فیصلے کا اعلان کیا۔ وزیراعظم پاکستان کا واضح لفظوں میں کہنا تھا کہ یہ فیصلہ اقوامِ متحدہ اور سلامتی کونسل کی قراردادوں کو مدِنظر رکھ کر کیا گیا۔ سوال یہ ہے کہ کیا واقعی اس فیصلے سے اقوام متحدہ کی قراردادوں پر کوئی اثر نہیں پڑے گا اور کیا واقعی مسئلہ کشمیر کے حل میں یہ اقدام موثر ہوگا؟ پاکستان کے پاس اس اقدام کے علاوہ کیا آپشن ہے۔؟ تاریخی طور پر گلگت بلتستان ریاست جموں و کشمیر کا حصہ تھا۔ لیکن 1948ء میں مقامی لوگوں کی مدد سے یہ پاکستان کے زیر کنٹرول آگیا۔



 
سید اسد عباس

امریکہ کے حالیہ انتخابات متنازعہ حیثیت اختیار کرچکے ہیں۔ مختلف ریاستوں میں ووٹوں کی گنتی روکنے کیلئے درخواستیں دائر ہوچکی ہیں۔ مظاہرین سڑکوں پر موجود ہیں۔ امریکی آر ٹی ایس سسٹم جو کرونا کے سبب ڈاک ووٹ پر مشتمل تھا، فلاپ ہوچکا ہے۔ ایسی صورتحال میں بائیڈن آتا ہے یا ٹرمپ دونوں اس صورتحال میں نہیں ہونگے کہ امریکی اسٹیبلشمنٹ کے فیصلوں سے تجاوز کرسکیں اور اپنی من مانیاں کرتے پھریں۔ میں تو کہوں گا کہ بائیڈن اور ٹرمپ دونوں یہ انتخاب ہار چکے ہیں اور امریکی اسٹیبلشمنت جسکا بڑا حصہ صہیونیوں پر مشتمل ہے کامیاب ہوچکی ہے

سوموار, 02 نومبر 2020 09:53

ماہنامہ پیام وسیرت النبیؐ



تدوین و ترتیب : سید اسد عباس
ماہنام پیام ۱۹۹۷ء سے شائع ہورہا ہے۔ ہماری کوشش ہوتی ہے کہ اپنے قارئین تک علی و فکری مطالب کو بہم پہنچایا جائے تاکہ تشنگان علم کی آبیاری کی سبیل جاری رہی۔ زیر نظر تحریر میں ہم نے ماہنامہ پیام کے دستیاب شماروں میں شائع ہونے والے سیرت النبی ؐ سے متعلق مقالات کی ایک Category کو مرتب کیا ہے نیز اس عنوان سے ماہنامہ پیام کے خصوصی شماروں کا الگ سے تذکرہ کیا گیا ہے۔ امید ہے یہ Category قارئین کے لیے مفید اور لائق تشویق ہوگی۔ اشاریہ یا Category سازی کا یہ کام قبلا پروفیسر عارف حسین نقوی مرحوم انجام دیا کرتے تھے آج ان کے تشکیل دئیے ہوئے اشاریوں سے استفادے کا سلسلہ جاری ہے۔ مقالات کی تلاش اور موضوعات کے تعین مین یہ اشاریے نہایت مفید ہیں۔ اللہ کریم مرحوم پروفیسر عارف حسین نقوی کو اس علمی خدمت پر اجر عظیم عنایت فرمائے۔

ہفته, 31 أكتوبر 2020 15:49

اداریہ پیام نومبر



آمد مصطفی مرحبا مرحبا
افضل الاناس، خیر البشر، ختم الرسل، رحمت دو جہاں، ہادی انس و جاں، داور بے کساں، منجی بشر،احمد ، محمد، مصطفی ، طہ،یس،،مزمل جس کا خود خالق کائنات ثناء خواں ہےاس کی بھلا کوئی انسان کیا تعریف و توصیف بیان کرے۔ ہماری زبان اور قلم میں وہ سکت ہی نہیں کہ اس ہستی کے وصف کو بیان کرسکیں۔ممدوح خدا ہونا ہی وہ وصف ہےکہ پوری انسانیت اس ہستی کے گن گاتی رہی ۔ ماہ ربیع الاول کائنات کی اس بہار کی آمد کا مہینہ ہے۔ یہ اس گل سرسبد کے کھلنے کا موسم ہے جس کی خشبو نے طول تاریخ میں اقوام عالم کو پاکیزگی اور لطافت سے معطر کر دیا۔ یہ اس نور کے ظہور کی گھڑی ہے جس نے دنیا کے گوش و کنار کوتوحید کی کرنوں سے روشن کر دیا۔ اہل ایمان کے دل اس مبارک گھڑی میں خوش کیوں نہ ہوں ؟ کیوں نہ اس بدر کے طلوع کا جشن منائیں اور خوشی کے عالم میں گنگناتے پھریں :
طَلَعَ الْبَدرُ عَلَیْنَا
مِنْ ثَنِیّا تِ الْودَاعٖ
وَجَبَ الشّْکرُ عَلَیْنا
مَا دَ عَا لِلّٰہِ دَا عٖ 



 
سید اسد عباس

جیسا کہ ہم نے اپنی گذشتہ تحریروں میں اعداد و شمار اور امریکی دانشوروں اور ماہرین کے اقوال کے ذیل میں دیکھا کہ امریکی ریاست، سیاست اور فوجی طاقت کے زوال کا عندیہ تقریباً ہر پیرائے سے عیاں ہے۔ اس کی ایک چھوٹی سی مثال کرونا کے دوران امریکہ میں میڈیکل پراڈکٹس کی پیداواری صلاحیت کی کمی ہے، جس کے لیے یا تو امریکہ کو پیداوار بڑھانی تھی یا پھر ان مصنوعات کو چین سے درآمد کرنا تھا۔ چین گذشتہ کئی برسوں سے امریکی منڈی سمیت اینٹی بائیوٹکس کے خام مال کی برآمد میں دنیا میں سب سے آگے ہے۔ چین نالج شیئرنگ، طبی سامان، عملے اور مالی اشتراک سے پوری دنیا کو اپنی کثیر الجہتی سفارتی امداد میں مسلسل توسیع کر رہا ہے۔ 

تازہ مقالے