ہفته, 07 مارچ 2020 16:12




شب کا مسافر
تیرہ شبی میں

 

ٹھوکر کھائے‘
گر گر جائے
چاند سا مکھڑا دیکھ نہ پائے

اوپر سارے
جاگتے تارے
دکھڑا دل کا
راز کی باتیں
کیسے سنائے
جان نہ پائے
چاند سا مکھڑا دیکھ نہ پائے

جاگتے سپنے‘
ویراں آنکھیں‘
رات اندھیری‘
گہرے سائے‘
دل گھبرائے
چاند سا مکھڑا دیکھ نہ پائے

کل کی یادیں
بات ادھوری
دل کی دل میں جب رہ جائے
کس کو سنائے
چاند سا مکھڑا دیکھ نہ پائے


* * * * * 

Read 71 times