عرفان

عرفان

وحدت الوجود اور خواجہ محمد یار فریدی رحمة اللہ علیہ

سید ثاقب اکبر

چیئرمین البصیرہ اسلام آباد

وحدت الوجود کا نظریہ عرفاءاور فلاسفہ کے مابین ایک قدیم نظریہ ہے جس پر بہت سے اعتراضات بھی کیے گئے اور اس کے حق میں دلائل بھی موجود ہیں ۔ اس نظریہ کے حوالے مدیر اعلی ماہنامہ پیام کی ایک تحقیقی تحریر پیش قارئین ہے ۔ اس تحریر میں جناب ثاقب اکبر نے گڑھی شریف تحصیل خانپور ضلع رحیم یار خان کے معروف صوفی بزرگ خواجہ محمد یار فریدی کے دیوان ” دیوان محمدی “ کامطالعہ کرنے کے بعد اس میں موجود نظریہ وحدت الوجود پر بحث کی ہے ۔ اس مقالے میں دیگر عرفاءو صوفیاءکے وحدت وجود کے حوالے سے نظریات کو بھی پیش کیا گیا ہے۔ جناب ثاقب اکبر مقالے کے اختتام پر تحریر کرتے ہیں” میں اس قابل نہیں کہ اولیاء، اصفیاءاور عرفاءکے کلام پر کچھ عرض کر سکوں، صرف اظہارِ سپاس گزاری کے طور پر قلم کی کچھ سیاہی صرفِ سخن کی ہے کہ شاید اس سے میرے لیے روشنی کا کچھ سامان ہو سکے۔ وحدت الوجود کے موضوع کا انتخاب اہل دل کی توجہات کا ذریعہ بن جائے تو میرے لیے صد سعادت سے فزوں تر ہے۔“(ادارہ)

  • مشاہدات: 101